اردو نظمیں

اچھا بچہ

رضا الرّحمن عاکف سنبھلی صبح سویرے ٹائم پر ہی آ جاتا ہوں میں اسکول ہر دن اپنا کام ہوں کرتا کبھی نہ کرتا اس میں بھول سب بچوں سے پیار ہوں کرتا یہ ہے میرا ایک اصول اچھا بچہ کہتے مجھ کو میں ہوں سب کی آنکھ کا پھول مکمل نظم بمع اسٹڈی پلان کے ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے نیچے کلک کیجیے۔ [pdf_attachment file=”1″ name=”اچھا بچہ اسٹڈی پلان”]

راجا رانی کی کہانی

صوفی تبسمؔ آؤ بچو سنو کہانی ایک تھا راجا ایک تھی رانی دونوں اک دن شہر میں آئے شہر سے اک اک گڑیا لائے راجہ کی گڑیا تھی دبلی رانی کی گڑیا تھی موٹی راجہ کی گڑیا تھی لمبی رانی کی گڑیا تھی چھوٹی راجا بولا میری گڑیا میری گڑیا بڑی سیانی گڑیاؤں میں جیسے رانی رانی بولی “میری گڑیا” میری گڑیا کے کیا کہنے اچھے اچھے گہنے پہنے راجا بولا “میری گڑیا” میری گڑیا بین بجائے میٹھے میٹھے گانے گائے رانی بولی “میری گڑیا” میری گڑیا ناچ دکھائے اچھلے کودے شور مچائے دونوں میں بس ہوئی لڑائی دونوں نے کی ہاتھاپائی رانی بولی سن مری بات میری گڑیا کے دو ہات ایک سے کھائے دال چپاتی ایک سے کھائے ساگ اور پات راجا بولا بس چپ کر میری گڑیا کے دو سر جیسے چڑیا کے دو پر ایک ادھر اور ایک ادھر رانی بولی ہوں ہوں ہوں میری گڑیا کے دو موں ایک سے کھائے گرم پکوڑے ایک سے بولے سوں سوں سوں اتنے میں اک بڑھیا مائی دوڑی دوڑی اندر آئی آتے ہی اک ڈانٹ پلائی کیا ہے جھگڑا کیا ہے لڑائی یہ بھی گڑیا وہ بھی گڑیا یہ بھی سیانی وہ بھی سیانی تو ہے راجا تو ہے رانی ختم کرو یہ رام کہانی یہ نظم بمع مشقی سوالات (study plan) کے ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے نیچے کلک کیجیے۔ [pdf_attachment file=”1″ name=”راجا رانی کی کہانی”]

بادل اور تارے

شاعر:  تلوک چند محروم ختم ہوا دن سورج ڈوبا شام ہوئی اور ابھرے تارے جگمگ جگمگ کرتے آئے نور کے ٹکڑے پیارے پیارے دور کہیں سے ٹھنڈے ٹھنڈے تیز ہوا کے جھونکے آئے کاندھوں پر اپنے وہ اٹھا کر چھوٹے چھوٹے بادل لائے ان کو دیکھ کے اور بھی برسا نور مسرت کا تاروں سے کوئی چھپا اور کوئی نکلا بادل کے ان انباروں سے کھیل رہے ہوں جیسے بچے