تربیت

کیا آپ میں بحثیت والدین یہ چھ خوبیاں موجود ہیں

عدیلہ کوکب کہا جاتا ہے ”تربیت وہی کارآمد ہے جو اپنے قول سے نہیں افعال کے ذریعے کی جائے“۔اس لیے ضروری ہے کہ خود والدین میں کچھ اوصاف ہونے چاہیں تا کہ بچے والدین سے سیکھیں اور ان کی ہر بات کو مانیں۔ اس آرٹیکل میں ہم چند اوصاف کا جائزہ لیں گے جو والدین میں پائے جانے چاہیں۔   احساسِ ذمہ داری تربیت دینےوالے کے لیے سب سے اہم

ایک حد تک اپنے بچوں سے امیدیں اور توقعات رکھنا صحیح ہے لیکن اس سے پہلے اپنے آپ کو بدلیے۔ جیسا آپ اپنے بچوں کو دیکھنا چاہتے ہیں پہلے وہ خود بنیے۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کا بچہ جھوٹ نہ بولے تو پہلے آپ خود جھوٹ بولنا چھوڑیے۔ یہ ہی مثبت تربیت ہے۔      

آپ کیسے والدین ہیں؟

اپنے بچوں کی بہترین پرورش کے لیے ہمیں اپنے بارے میں جاننے کی ضرورت ہے کہ ہم کس قسم کے والدین ہیں؟ یعنی یہ کہ ہمارا رویہ اپنے بچوں کے ساتھ کس قسم کا ہے؟ اس سلسلے میں کی گئی تحقیق کے مطابق والدین کو رویوں کے اعتبار سے مختلف قسموں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ AUTHORITARIAN PARENTING آمریت پسندانہ پیرنٹنگ  PERMISSIVE PARENTINGغیر مزاحم پیرنٹنگ NEGLECTFUL PARENTING لاتعلقانہ پیرنٹنگ AUTHORITATIVE